Shair

شعر

وہ تیروں کی بارش وہ یداللہ کا جانی
پچوبیس پہر گزرے کہ پایا نہیں پانی

(نجم (مصور حسین))

پیڑوں کی طرح حُسن کی بارش میں نہا لوں
بادل کی طرح جھوم کے گھر آؤں کسی دن

(امجد ‌اسلام ‌امجد)

پھر وہی آنسوؤں کی بارش ہے
پھر وہی دل کی خشک سالی ہے!

(امجداسلام امجد)

روتے روتے یوں دیدہ خود کام سفید
جوشِ بارش سے ہوں جُون ابرِ سیہ فام سفید

(محب)

جس تنہا سے پیڑ کے نیچے ہم بارش میں بھیگے تھے
تم بھی اُس کو چھوکے گزرنا، میں بھی اُس سے لپٹوں گا

(امجد اسلام امجد)

جیسے بارش سے دھلے صحنِ گلستاں امجد
آنکھ جب خشک ہوئی اور بھی چہرا چمکا

(امجد اسلام امجد)

First Previous
1 2 3 4 5 6
Next Last
Page 1 of 6

Poetry

Pinterest Share