• منکر پاک ہے وہ شیشے کی خوں ریزی سے
    مرد ماں دیکھو تو پھر آنکھیں ہیں کیوں لال اس کی
    جوشش
  • ماں کی آنکھیں چراغ تھیں جس میں
    میرے ہمراہ وہ دعا بھی تھی
    امجد اسلام امجد
  • خدا کے واسطے مت قتل کر ظالم سنبھال آنکھیں
    کرے ہیں چھاؤنی سی ہر طرف تیری چھنال آنکھیں
    مرزا علی
  • وہ دیکھنے ہمیں ٹک بیماری میں نہ آیا
    سوبار آنکھیں کھولیں بالیں سے سراٹھایا
    میر
  • نے مروت نے کبھی آنکھیں برابر تک نہ کیں
    نالہ کس حسرت سے منہ تکتا رہا تاثیر کا
    شاد
  • کنار نہر مسافر نے کلفتیں وہ سہیں
    کہ بار بار حبابوں کی آنکھیں پھوٹ بہیں
    شمیم
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter