• افسوس اہل دید کو گلشن میں جا نہیں
    نرگس کی گو کہ آنکھیں ہیں پر سوجھتا نہیں
    درد
  • پھول سو بھی جائیں تو روشنی نہیں بجھتی
    سبز دُوب کی آنکھیں جاگتی ہیں رستوں پر
    پروین شاکر
  • رشک مہ بن ہے یہ اندھیر کہ مجھ پر تارے
    دمبدم آنکھیں نکالے ہیں شب تار سے مل
    نصیر
  • بہتوں کی جب جانیں گھل گئیں
    نرگس کی بھی آنکھیں کھل گئیں
    میر
  • ڈوب جائیں گے ستارے اور بکھر جائے گی رات
    دیکھتی رہ جائیں گی آنکھیں گزر جائے گی رات
    شہزاد ‌احمد
  • تُو پکارے تو چمک اُٹھتی ہیں آنکھیں میری
    تیری صورت بھی ہے شامل تری آواز کے ساتھ
    احمد ‌ندیم ‌قاسمی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter