• وفا دامن کش پیرایہ ہستی ہے اے غالب
    کہ پھر نزہت گہ غربت سے تاحد وطن لائی
    غالب
  • مطلب نہیں جہاں کے سیاہ و سفید سے
    یکساں ہے شام غربت و صبح وطن مجھے
    الماس درخشاں
  • قائم وطن کے بیچ تو آسودگی نہ ڈھونڈو
    پر خار گلستان میں ہمیشہ ہیں پائے گل
    قائم
  • لالہ سو لال میرا لالی لگا گیا رے
    کوئی منج خبر کرو رے اوس کا وطن کہاں ہے
    حسن شوقی
  • آنکھیں جو دم نزع ہوئیں بند کھلے کان
    آواز سنائی پڑی یاران وطن کی
    اشک
  • تنقید کا اصول ہے جمہوریت کی جان
    مسلک ہے ناقدان وطن کا مگر غلط
    رئیس امروہوی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 11

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter