Shair

شعر

فراقِ خلد سے گندم ہے سینہ چاک اب تک
الٰہی ہو نہ وطن سے کوئی غریب جدا

(نامعلوم)

مجمع اہل وطن سے کوئی بیروں نہ کرے
آسماں صحبت احباب دگر گوں نہ کرے

(بیخقد (ہادی علی))

مثل عینک مجھے غربت ہے وطن سے بہتر
پائی آنکھوں پہ جگہ میں اگر گھر نہ ہوا

(شعور( مہذب اللغات))

صحرا میں جو بلبل ہوکہے کیا وہ چمن کی
آوارہ غبت کو خبر کیا ہے وطن کی

(اکبر آبادی)

لالہ سو لال میرا لالی لگا گیا رے
کوئی منج خبر کرو رے اوس کا وطن کہاں ہے

(حسن شوقی)

پہنچوں گتی وطن سے جو میں زہرا کے چمن میں
جان آئے گی دیدار مسیحا سے بدن میں

(بعئن (منظور حسین ))

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 11

Poetry

Pinterest Share