• وئی ماں برے یہ عورتاں کرتیاںبدی بیشک تو کوئی
    لاکھیاں سو جھوٹیاں‘ سوگنداں یک کے اوپر یک ڈھولتیاں
    ہاشمی
  • میداں سے جلد لیکے سکینہ کو گھر میں جا
    بے جرم کٹ گیا ترے ماں جائے گا گلا
    انیس
  • وہ اک دُود ماں کا تھا روشن چراغ
    جلاتے تھے سارے اسی پر دماغ
    میر
  • ہمہ اوست سوں خوشی خوشالی ہمہ ازوست ماں لذت
    حاکم مانے سو حکم مانے کیسا جھگڑا حجت
    گنج شریف
  • صبر کی سل غم اولاد میں دل پر دھر لوں
    کیسے ماں ہو کے بھلا چھاتی کو پتھر کرلوں
    شمیم
  • ہر دھ میں جس کا جی موا کیا ہے پلنگ نہالی اسے
    سکھ ہے تو ماں جی کوں بھلا سونا زمیں کا ٹاٹ
    ہاشمی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 14

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter