Shair

شعر

ہوئی پیدا عورت یو دو کام کوں
بدھانی کی ہے بیل ہور کام کوں

(ہاشمی)

یو اس چوری کی عورت ہے اندھاری رات نڑوے پر
چھنالا کرنے جاتی ہے ندی کے پار چوری سوں

(ہاشمی)

سونا کبھی شوہر کو میسر نہیں ہوتا
عورت انہیں باتوں سے ترا گھر نہیں ہوتا

(نازنی)

غواصی یقیں جان عورت ہے سانپ
پھبے بل تو نلدئے ہلا عذر جانپ

(غواصی)

کہو کیا عیب ہے بولو مٹھی تاڑی سیندھی پینا
کہی اوئی عیب کو گے نیں موی عورت کوں پینے کا

(ہاشمی)

پڑی ایسی دی ہےچنچل ہور چٹور
نے ڈرہے وہ عورت جنم کی دھنڈور

(ہاشمی)

First Previous
1 2 3 4 5
Next Last
Page 1 of 5

Poetry

Pinterest Share