• آنکھیں جو ہوں تو عین ہے مقصود ہر جگہ
    بالذات ہے جہاں میں وہ موجود ہر جگہ
    میر
  • آنکھیں جو ہوویں تیری تو تو عین کر رکھے
    عالم تمام گروہ نہیں تو یہ سب ہے کیا
    میر تقی میر
  • ہائے وہ شرم وہ حیا وہ حجاب
    میں نے چھیڑا لجا گئیں آنکھیں
    اعجاز نوح
  • وہاں آنکھیں ہیں ان کی دکھنے آئیں
    ہمیں یاں موت کا گھرا لگا ہے
    امانت لکھنوی
  • آنکھیں لڑا لڑا کر کب تک لگا رکھیں گے
    اس پردے ہی میں خوباں ہم کو سلا رکھیں گے
    میر تقی میر
  • جو آنکھیں ہوں تو ہر قطرے سے شبنم کے یہ ہے روشن
    دریں گلشن میسر نیست ترک اھولی کردن
    سودا
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter