• اس کی نہ پوچھو دوری میں اُن نے پرسش حال ہماری نہ کی
    ہم کو دیکھو مارے گئے ہیں آکر پاس وفا سے ہم
    میر تقی میر
  • پوچھیں ہیں وجہ گریۂ خونیں جو مجھ سے لوگ
    کیا دیکھتے نہیں ہیں سب ا‌س بے وفا کا رنگ
    میر تقی میر
  • وہ ستم گار کہ بے میرے ستائے نہ بنے
    میں وفا کیش کہ لب پر گلہ لائے نہ بنے
    نقوش مانی
  • کیونکر کہیں کہ شہر وفا میں جنوں نہیں
    اس خصم جاں کے سارے دوانے ہیں یہاں کے لوگ
    میر تقی میر
  • انجام وفا یہ ہے جس نے بھی محبت کی
    مرنے کی دعا مانگی‘ جینے کی سزا پائی
    نشور ‌واحدی
  • پیارے پران ناتھ خفا ہوگئے ہیں کیوں
    کا رن ہے کیا عدوے وفا ہوگئے ہیں کیوں
    سیتا رام
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 43

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter