• بہت پھونکے تری ہم نے محبت میں عمل حب کے
    پر اس کی چشم جادو پر نہ کچھ افسوں چلا اپنا
    تراب
  • آکہ بازار محبت میں اٹھا لی ہم نے
    جنس رد کردہ بازار وفا جس کو کہیں
    فکر جمیل
  • میں سمجھتا تھا محبت کی زباں خوشبو ہے
    پھول سے لوگ اسے کوب سمجھتے ہوں گے
    بشیر بدر
  • رواجِ اہلِ جہاں سے انہیں نہیں مطلب
    کہ یہ تو رسمِ محبت کو عام کرتے ہیں
    امجد اسلام امجد
  • ہےے’’ا‘‘ امر کا اور’’ب‘‘ ہے بنائے دولت
    ’’ر‘‘ پئے رسم محبت ہے بہت خوب عمل
    نسیم دہلوی
  • محبت میں اک ایسا وقت بھی دل پر گزرتا ہے
    کہ آنسو خشک ہوجاتے ہیں طغیانی نہیں جاتی
    جگر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 71

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter