Shair

شعر

چُھٹ کر کہاں اسیرِ محبت کی زندگی
ناصح یہ بند غم نہیں‘ قیدِ حیات ہے

(مومن)

محبت نے رگوں میں کس طرح کی روشنی بھردی!
کہ جل اٹھتا ہے امجد دل ، چراغِ شام سے پہلے

(امجد اسلام امجد)

جہاں دِلوں کی محبت کا کارخانہ ہے
وہاں تو لاکھ طرح دیکھنا دِکھانا ہے

(نظیر)

کھِنچ گیامیری طرف سے اور بھی دلبر کا دل
واہ وا جذبِ محبت کا اثر اچھا ہوا

(ذوق)

یوں ان کو اعترافِ محبت نہیں‘ مگر
آیا ہے پھر بھی لب پہ میرا نام دیکھئے

(نخشب ‌جارچوی)

دل سمجھ لیتا ہے جس وقت محبت کا مزاج
زندگی شعلے کی شبنم میں بدل جاتی ہے

(طفیل ‌ہوشیار ‌پوری)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 71

Poetry

Pinterest Share