Shair

شعر

دلِ کا مطالعہ کر اے آگہِ حقائق
ہیں فن عشق کے بھی مشکل بہت دقائق

(میر)

موسمِ عشق کی آہٹ سے ہی ہر اک چیز بدل جاتی ہے
راتیں پاگل کردیتی ہیں دن دیوانے ہوجاتے ہیں

(امجد اسلام امجد)

کرو نہ ضیق میں دم اپنے عشق بازوں کا
مسیح ہوکے مریضوں کو دق کیا نہ کرو

(شرف)

ہے عشق ایک روگ، محبت عذاب ہے
اک روز یہ خراب کریں گے، کہانہ تھا!

(امجد اسلام امجد)

موج زنی ہے میر فلک تلک پر لجہ ہے طوفاں زا
سر تا سر ہے تلا طم جس کا وہ اعظم دریا ہے عشق

(میر)

چندن، کافور راس بھریں ان کی درشٹ تل
جھانپی ہلک عشق کے کھولیں تل میں جاوے جل

(جانم)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 163

Poetry

Pinterest Share