• ظلم کی ٹہنی کبھی پھلتی نہیں
    ناؤ کاغذ کی سدا چلتی نہیں
    اسماعیل میرٹھی
  • سو ظلم کے رہتے ہیں سزاوار ہمیشہ
    ہم بیگنہ اُس کے ہیں گنہگار ہمیشہ
    میر تقی میر
  • پیار سے ہنس بیٹھنا ہے اور جگت اور جھوٹ ہے
    عدل ہے اور ظلم ہے غارت ہے لوٹا لوٹ ہے
    نظیر
  • خدایا داد لے ہور داد لے اس ظالماں کن تھے
    کہ جدنیں سو یتیماں پر جفا ہور ظلم دھایا ہے
    قلی قطب شاہ
  • ٹک گور غریباں کی کر سیر کہ دُنیا میں
    ان ظلم رسیدوں پر کیا کیا نہ ہوا ہوگا
    میر تقی میر
  • کیا چمن کی گل زمیں میں ظلم ہوتا ہے یقیں
    خار کو گلبدن کا دامن گیر کرتی ہے بہار
    یقین
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 16

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter