Shair

شعر

دل سمجھ لیتا ہے جس وقت محبت کا مزاج
زندگی شعلے کی شبنم میں بدل جاتی ہے

(طفیل ‌ہوشیار ‌پوری)

ہم نے جو حرف لکھا‘ دل کے تعلق سے لکھا
زاویے غم کے بدلتے گئے اظہار کے ساتھ

(شاعر ‌لکھنوی)

دل میں رہ کر نظر نہیں آتے
ایسے کانٹے کہاں نکلتے ہیں

(بشیر بدر)

ایک سب آگ ایک سب پانی
دیدۂ و دل عذاب ہیں دونوں

(میر تقی میر)

غنیمت جان اے دل نقش عشق یار جانی کو
شرف ہے اس مکاں کا جس میں مہمان حسیں آیا

(آتش)

ایک آن اس زمانے میں یہ دل نہ وا ہوا
کیا جانیے کہ میرزمانے کو کیا ہوا

(میر)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 740

Poetry

Pinterest Share