Shair

شعر

سچ تو یہ ہے عشق اک ایسا درد لطف انگیز ہے
بے اس کے بالکل ہیچ ہے‘ گر ہو حیات جاوداں

(نقوش مانی)

ہجر کی شب درد دل گھٹ گھٹ کے بادل ہو گیا
چشم دریا بار یہ برسی کہ جل تھل ہو گیا

(دیوان راسخ دہلوی)

پھول ہیں کہ لاشے ہیں‘ باغ ہے کہ مقتل ہے
شاخ شاخ ہوتا ہے‘ درد کا گماں یارو

(حمایت ‌علی ‌شاعر)

کہوں کس سے غم درد نہانی
نہیں اس درد کا مجھ پاس چارا

(میر)

تری اس درد بچ ہوں بوت روئی
میں رو کر انکھیوں کی جوت کھوئی

(یوسف زلیخا)

نہیں س درد کی دارو کسی کن
بھئے حیراں سبھی حکمائے ذوفن

(افضل جھنجھانوی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 65

Poetry

Pinterest Share