• گاہ وہمِ دہن اور گاہ کمر کا ہے خیال
    عاشقوں کو بھی عجب درد سری رہتی ہے
    اظفری
  • وقت کی گود میں دھندلا گئے روشن چہرے
    ہر خوشی درد کے پہلو میں پلا کرتی ہے
    نامعلوم
  • کرتا ہے جب بغور غم و درد پر نظر
    پیک خیال کان میں دیتا ہے یہ خبر
    شاد عظیم آبادی
  • ہجر کی شب درد دل گھٹ گھٹ کے بادل ہو گیا
    چشم دریا بار یہ برسی کہ جل تھل ہو گیا
    دیوان راسخ دہلوی
  • کہوں کس سے غم درد نہانی
    نہیں اس درد کا مجھ پاس چارا
    میر
  • زخم کی خیر نہ مانگوں کہ بڑھے اور بڑھے
    لذت درد نہ چاہوں کہ ترقی ہی کرے
    نقوش مانی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 65

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter