Shair

شعر

تو ہے کس ناحیہ سے اے دیار عشق کیا جانوں
ترے باشندگاں ہم کاش سارے بیوفا ہوتے

(میر تقی میر)

کے بیوفا کوں کیا آشنا کیا ہے
تو آبرو نیں کس گھاٹ لا اتارا

(دیر)

لفظوں کی اک پتنگ تھی بڑھ کر نکل گئی
کس بیوفا کو دل سے لگایا تھا بھول میں

(ماجد ‌الباقری)

لایا مرے مزار پہ اُس کو یہ جذب عشق
جس بیوفا کو نام سے بھی میرے ننگ تھا

(میر تقی میر)

رکھے ہیں میر ترے منہ سے بیوفا خاطر
تری جفا کے تغافل کی بدگمانی کی

(میر تقی میر)

تو نازین رسیلا
تو بیوفا رنگیلا

(فائز)

First Previous
1 2
Next Last
Page 1 of 2

Poetry

Pinterest Share