• وہ تم سے آج دورہے کل پاس آئے گا
    پھر سے خدا ملائے گا افسوس مت کرو
    بشیر بدر
  • افسوس ایک دن بھی دیکھا نہ تم نے آکے
    ہم کو تپ دروں نے مارا گھلا گھلا کے
    شعاع مہر
  • رستے کی سب بی بیاں نے نیں دیکھیاں بلبلانا
    بچھڑے تو پھر کرینگیاں افسوس بلبل کا
    ہاشمی
  • سن اروپ تیرا برہ ڈانک لگ
    ہوا ہے یو افسوس کی‘ آگ لگ
    میان ستونتی
  • کسی کو آب و ہوا موافق ہوئی نہ افسوس اس چمن کی
    ہمیشہ تھی نالہ کش عنادل، گلوں نے تا عمر خون تھوکا
    شاد عظیم آبادی
  • خون جگر کہاں صف مژگاں کے واسطے
    افسوس ایسی فوج کو ملتی رسد نہیں
    مہتاب داغ
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter