• ہوا کا لمس ہے پاؤں میں بیڑیوں کی طرح
    شفق کی آنچ سے آنکھیں پگھل نہ جائیں کہیں!
    امجد اسلام امجد
  • تھی چشم دمِ آخر وہ دیکھنے آوے گا
    سو آنکھیں میں جی آیا پردہ نہ نظر آیا
    میر تقی میر
  • دشمن ہیں سب خدا ہی کی رحمت ہے جاں نواز
    دل کو لگا خدا ہی سے لے اپنی آنکھیں موند
    اکبر
  • ادا و ناز و تغافل میں فرق ہے باریک
    کہاں سے لائیں وہ آنکھیں جو امتیاز کریں
    شاد
  • خدا جانے کہ ہے کس برق وش کا سامنا مجکو
    کہ میں کچھ بیٹھے بیٹھے خود بخود آنکھیں جھپکتا ہوں
    جرأت
  • تیری آنکھیں میری آنکھیں لگتی ہیں
    سوچ رہا ہوں کون یہ تجھ سا مجھ میں ہے
    ایوب ‌خاور
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter