• جب شباب آکر زلیخا کے دوبارہ دن پھرے
    کھل گئیں آنکھیں سی یوسف کی یہ عالم دیکھ کر
    داغ
  • دیکھی جو نہ تھیں حیدر کرار کی آنکھیں
    مست مئے نخوت تھیں جفا کار کی آنکھیں
    انیس
  • ایک غزال رم خوردہ کا منہ پھیرے ایسے میں گزرنا
    جب مہکی ہوئی ٹھنڈی ہوائیں دن ڈوبے آنکھیں جھپکائیں
    فراق
  • دل صفا ہوگیا سینے میں تو پائے یہ شَرَف
    جب کہ آنکھیں ہوئی حق ہیں تو مِلا دُرِ نجف
    انیس
  • آنکھیں وہ چشم پیل سے بد بیں کی خرد تر
    بد صورت اس قدر کہ ڈرے جن بھی دیکھ کر
    یکتا(حیدر حسین)
  • ہائے وہ شرم وہ حیا وہ حجاب
    میں نے چھیڑا لجا گئیں آنکھیں
    اعجاز نوح
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter