Shair

شعر

فراز ظلم ہے اتنی خود اعتمادی بھی
کہ رات بھی تھی اندھیری‘ چراغ بھی نہ لیا

(احمد ‌فراز)

ظلم کا لگا لگا کر آشیانوں کو نہ چھیڑ
بلبلیں صیاد چپ ہیں بے زبانوں کو نہ چھیڑ

(دیوانجی)

اس چرخ سیہ رونے اک فتنے کو سنکارا
اس ظلم رسیدہ کو کن سختیوں سے مارا

(میر)

مثل مشہور ہے خالہ کا گھر نہیں ہے
ستم ہے ظلم ہے جور و جفا ہے

(احمد گجراتی)

دختر کشی میں سخت تھے ظالم زیادہ تر
اس ظلم سے تو اور بھی خوش تھے وہ بد سیر

(شاد عظیم آبادی)

کیا سکھائے گا ان کو ظلم فلک
خود وہ سیکھے سکھائے بیٹھے ہیں

(انور دہلوی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 16

Poetry

Pinterest Share