Shair

شعر

گوائی جان شیریں مثل فرہاد
اٹھاجس نے لیا بار محبت

(جہاں دار)

بیمار محبت نے لیا تیرے سنبھالا
لیکن وہ سنبھالے سے سنبھل جائے تو اچھا

(ذوق)

محبت درحقیقت ایک اندازِ پرستش ہے
محبت کا مزا جب ہے محبت غائبانہ ہو

(اکبر ‌حیدری)

محبت کی پرتیت تم اب ڈبوئی
کرو گے کسو سے نہ کوئی نکوئی

(اظفری)

دن رات کا فرق ان کی محبت میں ہے اب تو
وعدہ تو کیا شام کا اور آئے سحر کو

(صابر)

عجب نہیں کوئی سرگشتہ محبت ہو
بگولا ایک پس گرد کارواں دیکھا

(صفی لکھنوی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 71

Poetry

Pinterest Share