Shair

شعر

بتوں کو ساری خدائی کی باتیں آتی ہیں
یہ راہ و رسم محبت مگر نہیں معلوم

(سحر(امان علی))

ماہر میں محبت کے صحیفوں میں ملوں گا
ڈھونڈیں جو کبھی مجھ کو میرے ڈھونڈنے والے

(ماہر ‌القادری)

سچ ہے طریق مہر و محبت کا ہے بُرا
تم کیا کرو کہ نام ہی اُلفت کا ہے بُرا

(امیر مینائی)

ہو گئی جان کی لیوا تری الفت بیری
مرگ کے کرتی ہے سامان محبت یہ سبھی

(نظیر)

پاس رہ کر بھی دور دور رہے
ہم نئے دور کی محبت تھے

(بشیر بدر)

توہی میری محبت سے نہیں بے زار اے ظالم
جسے چاہا ہوا دشمن، مجھے اس باب کا جَس ہے

(حسرت (جعفر علی))

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 71

Poetry

Pinterest Share