Shair

شعر

ڈالا ہے مجھے عشق نے اس شوخ کے پالے
دل دیتے ہی مجکو تو پڑے جان کے لالے

(انتخاب دیوان)

عشق میں نے خوف و خطر چاہیے
جان کے دینے کو جگر چاہیے

(میر)

واں درد سے تھا وہ دست بردل
یہاں عشق سے تھی شکست بردل

(ہوس)

عشق کا ذوقِ نظارا مفت میں بدنام ہے
حُسن خود بیتاب ہے‘ جلوے دکھانے کے لئے

(مجاز ‌لکھنوی)

گھبرا نہ میر عشق میں اس سیل زیست پر
جب بس نہ چلا کچھ تو مرے یار مرگئے

(میر تقی میر)

رگڑواتا ہے برسوں ایڑیاں بیمار الفت سے
یہ عشق کینہ خورد ردن کی بیماری نہیں دیتا

(شاد)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 163

Poetry

Pinterest Share