Shair

شعر

قالب کوں رکھ تو دانا گر عشق کا ہے دانا
منزل کوں جلد پہنچے مر کب ہو گر تکاور

(دیوان شاکر ناجی)

رایت آہ پیشرو فوج سر شک در جلو
خضرت عشق آئے تو زد رہی بھیڑ بھاڑ سے

(انشا)

میں پیر عشق ہوں مجنوں مرید ہے میرا
وہ عاشق میں خلیفہ رشید ہے میرا

(تراب)

یا عاشقی کے نام سے چڑھتی تھی تب ہمیں
کچھ سوجھتا نہیں ہے بجز عشق اب ہمیں

(امیر مینائی)

عذر کیا کیا نہ تراشا کئے اربابِ ہوس
جاں دینے کا ہوا عشق کو یارا تنہا

(سلیم ‌احمد)

وفا کیسی کہاں کا عشق جب سرپھوڑنا ٹھہرا
تو پھراے سنگ دل تیرا ہی سنگ آستاں کیوں ہو

(غالب)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 163

Poetry

Pinterest Share