Shair

شعر

ضبط غم کاوش نے میرے دل کو تودہ کردیا
ہوگیا پیکاں سمٹ کر تیر اپنی اہ کا

(مرآة الغیب)

خدا نہیں ہے مگر دل کی کائنات پر وہ
ہے اِک عمر سے چھایا ہوا خدا کی طرح

(شاعر ‌لکھنوی)

سخت ہم کو میر کے مرجانے کا افسوس ہے
تم نے دل پتھر کیا وہ جان سے آخر گیا

(میر)

وہ تو چہرے سے برس پڑتے ہیں آثار ملال
ضبط اشک دیدہ تر پردہ دار دل سہی

(قمر)

عالم کی بے فضائی سے تنگ آگئے تھے ہم
جاگہ سے دل گیا جو ہمارا بجا ہوا!

(میر تقی میر)

تیری باتیں ہی سُنانے آئے
دوست بھی دل ہی دُکھانے آئے

(احمد ‌فراز)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 740

Poetry

Pinterest Share