Shair

شعر

ہتھی منگل ہیں صریح اس کے فیل خانے کے
جو گڑگڑاتے ہیں جوبن کے بادلاں کے دل

(غواصی)

دل غم سے ٹکڑے ہوگیا روئے جھُکا کر سر
بولے قریب آکے کدا پر گرو نظر

(انیس)

مجھ کو باتوں میں لگا معلوم نئیں کیا کہہ گیا
لے گیا جب دل کئیں منھ دیکھتا میں رہ گیا

(ناجی)

گو سلامت ہوں میں ظاہر میں پہ دل کے خطرات
رات دن گھن کی طرح میرے تئیں کھاتے ہیں

(درد)

کہیں بھنگراج دل کو کھینچتا ہے خوش نوائی سے
کہیں مینائیں غل کرتی ہیں آپس کی لڑائی سے

(شوق قدوائی)

اب جو چھاتی جلی تی الواقع لطف نہیں ہے شکِایت کا
صبر کرو کیا ہوتا ہے یوں پھوڑیں دل کے پھپھولے ٹک

(میر)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 740

Poetry

Pinterest Share