Shair

شعر

وصل کے دن کی آرزو ہی رہی
شب نہ آخر ہوئی جدائی کی!

(میر تقی میر)

آرزو رہ گئی اس کوچے میںپامال کی
دھوم ہی دھوم فقط چرخ جفا کر کی تھی

(آتش)

نہ جی بھر کے دیکھا نہ کچھ بات کی
بڑی آرزو تھی ملاقات کی

(بشیر بدر)

ہمیں بھی دیکھ کہ ہم زندگی کے صحرا میں
کھلے ہوئے ہیں کسی زخمِ آرزو کی طرح

(شاعر ‌لکھنوی)

نیک و بد تیرے ثنا خوان ہم
لطف تیرا آرزو بخشِ امم

(میر تقی میر)

صدقے میں ترے یہ آرزو ہے
دم میں دو آخرت کریں طے

(محسن کاکوروی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 21

Poetry

Pinterest Share