Word of the dayآج کا لفظ

Martello

کنج انزدا

MEANS: ملک کی حفاظت کے لئے ساحلی قلعہ بندی

معنی: گوشہِ تنہائی

Listen to Urdu Pronunciationالفاظ کے تلفظ سنئیے

Couplet of the day

آج کا شعر

Click on the below image to open up the complete image gallery. مکمل گیلری کو دیکھنے کے لئے نیچے دی گئی تصویر پر کلک کریں۔

Urdu Encyclopedia

اردو انسائیکلوپیڈیا

Sparrow گورِیا / چڑیا

English NameSparrow
Group of AnimalBird
Pluralگوریائیں / گوریاؤں
Maleچڑا / نر گوریا
Female جی ہاں
Baby Animal's Name بوٹی
Soundچہچہانا / چہچہاہٹ
No Urdu Name کنجشک / گُرگُریا / عصفور
Imagehttp://www.flickr.com/photos/hoganphoto/3000045450/

Description

تفصیل

گوریا عصفوری (Passerine) نسل سے تعلق رکھنے والا چھوٹا سا پرندہ ہے۔ اس کی 35 سے زائد اقسام دنیا بھر میں پائی جاتی ہیں اور یہ Spasseridae خاندان سے تعلق رکھتا ہے۔ مختلف اقسام کی گوریاؤں میں بہت معمولی فرق پایا جاتا ہے۔ عموماً گوریا کا رنگ خاکی اور بھورا ہوتا ہے اس کی ایک ننھی اور مضبوط چونچ ہوتی ہے اور ایک چھوٹی سی دُم بھی ہوتی ہے جو اسے پرواز کے دوران اپنا رخ تبدیل کرنے میں مدد دیتی ہے۔ یہ چھوٹے بیج / دانے جیسے باجرہ وغیرہ کھانے والا پرندہ ہے‘ اس کے علاوہ چھوٹے موٹے کیڑے مکوڑوں کو بھی اپنی غذا کا حصہ بناتا ہے۔ یہ پرندہ عام طور پر 11.4 سینٹی میٹر لمبا اور 13.4 گرام تک کے وزن کا ہوتا ہے۔ اس کی ایک نسل جو Parrot billed Sparrow کہلاتی ہے سب سے بڑی جسامت کی ہوتی ہے جس کی لمبائی 18 اور وزن 42 گرام تک ہوتا ہے۔ گوریا کے منہ میں زبان کے نیچے ایک اضافی ہڈی بھی ہوتی ہے۔ اس کا نر جسامت میں نسبتاً بڑا ہوتا ہے اور اس کے بازوؤں پر رنگین پر اسے مزید خوبصورت بناتے ہیں۔ اس کے علاوہ اس کے سر کی بناوٹ بھی عام گوریا کے سر کی بناوٹ سے تھوڑی مختلف ہوتی ہے۔ گوریا گھونسلوں میں ایک وقت میں دو انڈے دیتی ہے جو عموماً چتکبرے ہوتے ہیں۔ نر اور مادہ دونوں ان کو سیتے ہیں اور اپنے بچوں کو غذا بھی فراہم کرتے ہیں۔ گوریا کو اردو / فارسی میں کنجشک کے نام سے جانا جاتا ہے اور اسی حوالے سے اس کی خاص خاص قسموں کا ذکر کیا گیا ہے۔ کنجشکِ خانگی : گوریا کی یہ قسم انسانی آبادیوں میں رہتی ہے اور عمارتوں‘ درختوں یا کسی بھی جگہ جو انہیں میسر ہوتی ہے وہاں اپنا گھونسلہ بنالیتی ہے۔ کنجشکِ تاتا : یہ کنجشکِ دیسی سے جسامت میں تھوڑی سی بڑی ہے اور اس کا رنگ خاکی ہوتا ہے۔ کنجشکِ جَستی : اس گوریا کی خصوصیت یہ ہے کہ یہ درختوں کے بجائے زمین کی سطح پر اپنا ٹھکانہ ڈھونڈتی ہے اور جُھنڈ کی صورت میں رہتی ہے۔ کنجشکِ چڑک : اس چڑیا کا قد چنڈور کے برابر اور رنگ بنیادی طور پر خاکی ہوتا ہے۔ یہ چڑیا بھی غول کی صورت میں درختوں پر بسیرا کرتی ہے اور جنگلوں میں رہنا پسند کرتی ہے۔ کنجشکِ دیسی : یہ چڑیا باغوں اور جنگلوں میں رہتی ہے۔ شکل و صورت میں کنجشکِ خانگی سے ملتی جلتی ہے۔ کنجشکِ رُدی : یہ کنجشکِ دیسی سے مشابہ ہے البتہ اس کے نر کی پیشانی زرد ہوتی ہے۔ اس کی آماجگاہ پنجاب کا علاقہ ہے۔ کنجشکِ سادی : اس چڑیا کا رنگ گہرا زرد اور قد سٹہری کے برابر ہوتا ہے۔ نر رنگین پروں والا جب کہ مادہ خاکی مائل رنگ کی ہوتی ہے۔ کنجشکِ سورُنگا : یہ چڑیا تلیّر کے قد کے برابر خاکی رنگ کی ہوتی ہے اور جھنڈ بنا کر میدانوں میں رہتی ہے۔ کنجشکِ مہاستی : یہ رنگین پروں والی چڑیا ہے۔ اس کا قد بھی سٹہری کے برابر ہوتا ہے البتہ درختوں پر رہنا پسند کرتی ہے۔ اردو ادب میں شاعروں نے کنجشک کو کافی استعمال کیا ہے مثلاً ’’بالِ جبرئیل‘‘ میں ہے گرماؤ غلاموں کا لہو سوزِ یقیں سے کنجشکِ فرومایہ کو شاہیں سے لڑادو اسی طرح ’’ہفتِ کشور‘‘ میں ہے خانہ زادوں میں سپہدار جو آبیٹھے ہیں ایک ہی شاخ میں کنجشک و ہما بیٹھے ہیںہ

Shair Collection

اشعار کا مجموعہ

Compilation of top 20 hand-picked Urdu shayari on the most sought-after subjects and poets

انتہائی مطلوب مضامین اور شاعروں پر مشتمل 20 ہاتھ سے منتخب اردو شاعری کی تالیف

SEE FULL COLLECTIONمکمل کلیکشن دیکھیں
Pinterest Share