• آنکھ چاہت کی ظفر کوئی بھلا چھپتی ہے
    اس سے شرماتے تھے ہم‘ ہم سے وہ شرماتا تھا
    بہار شاہ ظفر
  • کسِ نے چاہت میں نہیں دکھ پائے
    پیار کرکے کِسے ایدا نہ ہوئی
    الماس ِ درخشاں
  • لفظ تو سب کے اک جیسے ہیں، کیسے بات کھلے؟
    دنیا داری کتنی ہے اور چاہت کتنی ہے!
    امجد اسلام امجد
  • تم سے راسخ اٹھ سکیں گے صدمے چاہت کے کہاں
    ڈوبتا ہے جی ہمارا نام سن کر چاہ کا
    راسخ
  • آنسو کو کبھی اوس کا قطرہ نہ سمجھنا
    ایسا تمہیں چاہت کا سمندر نہ ملے گا
    بشیر بدر
  • تو جانتا نہیں مری چاہت عجیب ہے
    مجھ کو منا رہا ہے، کبھی خود خفا بھی ہو
    بشیر بدر
First Previous
1 2 3 4
Next Last
Page 1 of 4

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter