• نہیں امجد کوئی قمیت وفا کی
    یہ سودا اب یہاں بکتا نہیں ہے
    امجد اسلام امجد
  • ہوا ہے تیز، چراغِ وفا کا ذکر تو کر
    طنابیں خیمۂ جاں کی نہ ٹوٹ جائیں کہیں!
    امجد اسلام امجد
  • اک جاگہر پر آب وفا اک جا نور دل اہل صفا
    اک جا تیغ پر خون جفا اک جا شکن بالاے جبیں
    مانی
  • تیرے سوا کوئی شائستہ وفا بھی تو ہو!
    میں تیرے در سے جو اٹھوں تو کس کے گھر جاؤں
    احمد ‌ندیم ‌قاسمی
  • بڑے جو ہیں وہ بے ثمر جو خرد ہیں وہ خیرہ سر
    عطا نہیں کرم نہیں ادب نہیں وفا نہےں
    اکبر
  • ہے دل میں اعل ہبل‘ لب پہ ہللویا ہے
    کہاں صدیق وفا پیشہ و حمیم احم
    منحمنا
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 43

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter