• فراقِ خلد سے گندم ہے سینہ چاک اب تک
    الٰہی ہو نہ وطن سے کوئی غریب جدا
    نامعلوم
  • اب کدھر جاؤ گے ، کیا اپنا وطن کیا پردیس
    ہر طرف ایک ہی سمتوں کا نشاں ملنا ہے
    مصطفےٰ زیدی
  • کیا پھرے وہ وطن آوارہ گیا اب سو ہی
    دل گم کر دہ کی کچھ خیر خبر مت پوچھو
    میر
  • اس بحر میں رہا مجھے چکر بھنور کے طور
    سر گشتگی میں عمر گئی سب وطن کے بیچ
    میر
  • تری یہ زلف ہے شام غریباں
    جبیں تیری مجھے صبح وطن ہے
    ولی
  • کیا ہے عشق نے میری دُرونی میں وطن اپنا
    کہ ہر دم ڈھونڈتے پِھرتے اچھو دامِ سخن اپنا
    حسن شوق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 11

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter