• مجھ سا محنت کش محبت میں نہیں
    ہر زماں کرتا رہا ہوں جاں کنی
    میر
  • زمانہ کفرِ محبت سے کرچکا تھا گُریز
    تری نظر نے پلٹ دی ہوا زمانے کی
    فانی ‌بدایونی
  • جھگڑے لگے ہیں یوں تو بہت آدمی کے ساتھ
    یا رب نہ ہو کسی کو محبت کسی کے ساتھ
    داغ
  • یہ سانحہ بھی محبت میں بارہا گزرا
    کہ اس نے حال بھی پوچھا تو آنکھ بھر آئی
    ناصر ‌کاظمی
  • ہو کے بیتاب محبت میں جو رو دیتے ہیں
    ضبط کا نام تنک ظفر ڈبو دیتے ہیں
    زیبا
  • ہم سے کیا ہوسکا محبت میں
    خیر‘ تم نے تو بے وفائی کی
    فراق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 71

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter