• اسے ماں نے جو دیکھا ماہ تاباں
    ہوئی سو جاں سے تب اس پہ قرباں
    فگار
  • ہے نیند ماں اجڑی کے نت چونک پڑتی غم سیں ہوں
    تو سب کتیاں جھڑپن ہوا چونکے پہ ہور بچکاٹ پر
    ہاشمی
  • وہ اک دُود ماں کا تھا روشن چراغ
    جلاتے تھے سارے اسی پر دماغ
    میر
  • صبر کی سل غم اولاد میں دل پر دھر لوں
    کیسے ماں ہو کے بھلا چھاتی کو پتھر کرلوں
    شمیم
  • تم ماں ہو بڑے دکھ سے اسے تم نے ہے پالا
    ہے حق بہ طرف گر ہو کلیجہ تہہ و بالا
    انیس
  • پھپی کی جان ہے ماں کا مرادوں والا ہے
    کہاں بتاو مری آنکھ کا اجالا ہے
    شمیم
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 14

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter