• بڑی ہے شوخڑی عورت پوچھے نت ہاشمی کاں ہیں
    بی بیاں میں ناؤں لے موں بھر اجڑ گئی کوں ہوا کیا خوں
    ہاشمی
  • ہے عورت اک لطیف جنس اپنے مرد کے لیے
    یہ فطرت اس کی ہے کہ اس کی سمت اس کا دل کھنچے
    عالم
  • ہوئی پیدا عورت یو دو کام کوں
    بدھانی کی ہے بیل ہور کام کوں
    ہاشمی
  • دلدل جو ہو رہی ہے ہر اک جا پہ رسمسی
    مر مر اٹھا ہے مرد تو عورت رہی پھنسی
    نظیر
  • یو اس چوری کی عورت ہے اندھاری رات نڑوے پر
    چھنالا کرنے جاتی ہے ندی کے پار چوری سوں
    ہاشمی
  • جہاں لگ ہے بد فعل عورت چھتال
    رہے نا جتا کچ رکھیں اوس سنبھال
    غواصی
First Previous
1 2 3 4 5
Next Last
Page 1 of 5

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter