• زہر لگتی ہے مجھے آب و ہواے زندگی
    یعنی، تجھ سے تھی اسے ناسازگاری، ہائے ہائے
    غالب
  • دھوپ ہے اور زرد پھولوں کے شجر ہر راہ پر
    اک ضیائے زہر سب سڑکوں کو پیلا کرگئی
    منیر ‌نیازی
  • ایک بھائی کو ہے فاقہ ایک کرتا زہر مار
    اٹھ گئی دنیا کے پردے سے محبت آج کل
    جان صاحب
  • سبز چہرے نے ترے اے سبز بخت
    زہر قاتل ہو کیا جیو لخت لخت
    ولی
  • مراآنسو ہے وہ زہر اب نیلا ہو بدن سارا
    خدا ناکردہ لگ جائے گر اے غمخوار دامن سے
    ذوق
  • میں ہوں وہ کشتہ کہ بیگانہ ہے سبزہ جس سے
    اور اگر ہے تو ہے آغشتہ زہر اب سناں
    ذوق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 15

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter