• آتا ہے جب خیال میں وو سرو سبز پوش
    ہوتا ہے زہر عشق سوں سب تن بدن ہرا
    داؤد اورنگ آبادی
  • جس کو ڈسا ہے زلف نے وہ تو ہے اور ہی لہر میں
    کالے کا کاٹا ہے غضب زہر چڑھا اور موا
    تراب
  • زندگی کیا جانے کیوں محسوس ہوتا ہے مجھے
    تجھ سے پہلے بھی ہو جیسے زہر یہ چکھا ہوا
    صہبا اختر
  • مرا آنسو ہے وہ زہر آب‘ نیلا ہو بدن‘ سارا
    خدا نا کردہ لگ جائے گر اے غم خوار دامن سے
    ذوق
  • ایک صاحب نے قبول اس زہر کا پیانہ گیا
    جن نے ٹکڑے سب جگر آناً فآناً کسردیا
    سودا
  • میں از قبیل جواہر ہوں باز زہر فلک
    ولیک سختی طالع مری ہے سنگ سماق
    سودا
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 15

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter