• سیکڑوں دل اک نگہہ پر لے لیے ہیں اس نے مول
    ہو نہ ہو کچھ نفع لیکن جنس سستی ہی بھری
    ظفر
  • سخن گوئی تو کرتا ہوں فصیح و پر بلاغت میں
    مگر ڈرتا ہوں دل میں عیب جو یوں کے تہدف سے
    دیوان حافظ ہندی
  • دل نے تسخیر کیا شوخ کوں حیرانی میں
    آرسی شہرہ عالم ہے پری خوانی میں
    ولی
  • یہی دو چار نگ یاں گوں ہیں پیارے نام کے تیرے
    نہ بھائے دل کا گر کڑا کوئی لخت جگر لے جا
    قائم
  • دل کی اب روک تھام کون کرے
    ضبط پر اختیار ہی نہ رہا
    فانی
  • بی بی پوچھ کر دل سے بوجھا بوچھار
    کہ جیو لینے کوں آیا ہے آشکار
    (ق)
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 740

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter