• اب یاس کے پتلوں کو نہیں آس خدا سے
    لب آہ سے برہم دل آزردہ دعا ہے
    بیخود
  • دشمنِ جاں ہی سہی‘ دوست سمجھتا ہوں اُسے
    بددعا جس کی مجھے بن کے دعا لگتی ہے
    مرتضیٰ ‌برلاس
  • بی بلائی سے بہت التجا
    گریہ محراب سے چاہی دعا
    میر
  • اے گریہ دعا کر کہ شب غم بسر آوے
    تاچند ہر اک اشک کی تہ میں جگر آئے
    قائم
  • آقا کا میرے نہ بال بیکلا ہوئے
    رویاں رویاں میرا دعا کرتا ہے
    دبیر
  • اس دور جُدائی سے کہیں جاں نہ نکل جائے
    آزرد میرے حق میں ذرا تُو بھی دعا کر
    مفتی صدر الدین خان صاحب آزرد
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 26

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter