• وہ نازک دلاں پر ہوا درد حیف
    پکارے ہیں جنگلے جنگل ہائے ہائے
    قادر
  • اوسے باپ لاڑاں سوں پالا بہوت
    درد ہور دوکھ میں سنبھالا بہوت
    رضوان شاہ و روح افزا
  • یہاں پہ سکّۂ اہلِ ریا نہیں چلتا
    کہ اہلِ درد نظر سے کلام کرتے ہیں
    امجداسلام امجد
  • سنو شعوری یو دوکھ ہمارا کرم سوں کرتا نظر ہمن پر
    رہیا نہیں حال ہم منے کچھ یو دل درد سوں گلیا ہے سارا
    شعوری
  • نشستِ درد بدلی ہے تو اب دل
    ذرا پہلو بدلنا چاہتا ہے
    امجد اسلام امجد
  • بے درد‘ سینہ کوٹنا خالی نہیں مرا
    دل میں بھرا ہے درد مرے کوٹ کوٹ کے
    ذوق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 65

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter