• کئے ہیں مومناں کسوت حسن کے زہر تھے ہریا
    سو اس کے چھاؤں تھے اسمان اپنا رنگ بھرایا ہے
    قلی قطب شاہ
  • مردوں سے پرچ تو مت حسن ہے پری کمبخت
    اب بھی آ تو جانے دے درگزر اری کمبخت
    انشا
  • حسن خلوت سے نکلتا ہے بر افگندہ نقاب
    جب ہوا کی رو میں چھڑ جاتے ہیں فطرت کے رباب
    اسرار
  • اثر پذیر ہوا حسن خود نمائے بہار
    چمن میں روح نباتی بنی ہوائے بہار
    عزیز لکھنوی
  • چڑھائی ہو رہی ہے حسن عالمگیر کی مجھ پر
    پریزادوں نے میرے دل کے ڈانڈے کو دبایا ہے
    شرف( آغا حجو)
  • تاگل کے رو سے رنگ اڑے اوس کی نمن
    اے آفتاب حسن ٹک یک توں چمن میں آ
    ولی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 81

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter