• بارش کی دعاؤں میں نمی آنکھ کی مل جائے
    جذبے کی کبھی اتنی رفاقت بھی بہت تھی
    پروین ‌شاکر
  • چاروں طرف کمان کیانی کی وہ ترنگ
    رہ رہ کے ابر شام سے تھی بارش خدنگ
    انیس
  • اِک ایسے ہجر کی آتش ہے میرے دل میں جِسے
    کسی وصال کی بارش بُجھا نہیں سکتی
    امجد ‌اسلام ‌امجد
  • ہمیشہ اشک کی بارش ہے نخل مژگاں سے
    شب فراق یہ مہوا بلا ٹپکتا ہے
    انتخاب رامپور
  • بارش کی آواز سے امجد
    شہر کا چہرہ کِھل اٹھا ہے
    امجد اسلام امجد
  • مظہر، اَزل کے حُسن کے امجد ہیں بے شمار
    لیکن جو دیکھئے تو ہے بارش کی بات اور
    امجداسلام امجد
First Previous
1 2 3 4 5 6
Next Last
Page 1 of 6

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter