• اب گئے اُس کے جُز افسوس نہیں کچھ حاصل
    حیف صد حیف کہ کچھ قدر نہ جانی اس کی
    میر تقی میر
  • میری آنکھیں روتی ہیں ناسخ اسی افسوس میں
    آہ ہم تر ہوں لب آل پیمبر خشک ہوں
    ناسخ
  • میں بڑا چکما کھا گئی افسوس
    جو ترے جل میں آگئی افسوس
    شوق
  • افسوس جنس دل کی نہ کچھ ہم نے قدر کی
    کرنا تھا مول چشم خریدار دیکھ کر
    داغ
  • منہ دکھاتی نہیں افسوس شب فرقت میں
    رکھتی ہے عاشق جاں باز سے کیا عار سحر
    نسیم دہلوی
  • دنیا میں اور چاہنے والے بھی ہیں بہت
    جوہونا تھا وہ ہوگیا افسوس مت کرو
    بشیر بدر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter