• افسوس کوئی نیکی گرہ میں نہیں مری
    لنبے سفر کے واسطے زاد سفر نہیں
    ترانہ مسرت
  • افسوس کہ درد اس کو جب تک
    ہووے ہے خبر گزر گئے ہم
    درد
  • افسوس ہے کہ ہم تو رہے مست خواب صبح
    اور آفتاب حشر لب بام آگیا
    مصحفی
  • اوٹہ (اٹھ) گیا بے کہے وہ یار افسوس
    جی کی جی میں رہی ہزار افسوس
    انتخاب رامپور
  • لگ گئی جس کو لگن کب وہ پر افسوس جئے
    شمع جلتی ہے سراپا در فانوس لئے
    نصیر دہلوی
  • بے کار جی پہ بوجھ لیے پھر رہے ہوتم
    دل ہے تمہارا پھول سا افسوس مت کرو
    بشیر بدر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter