• گریے کا فلسفہ ہے عیاں اہل ہوش پر
    رونے جب مزہ ہے کہ آنکھیں ہوں جوش پر
    یکتا امروہوی
  • کچھ ایسے اُس کی جھیل سی آنکھیں تھیں ہر طرف
    ہم کو سوائے ڈوبنے کے راستہ نہ تھا
    امجد اسلام امجد
  • آنکھیں جو دم نزع ہوئیں بند کھلے کان
    آواز سنائی پڑی یاران وطن کی
    اشک
  • نظر بھر دیکھتا کوئی تو تم آنکھیں جھپا لیتے
    سماں اب یاد ہوگا کب تمھیں وہ خورد سالی کا
    میر
  • دیکھا جو رخ حور کھل رہ گئیں آنکھیں
    جودل نے کہا صاف وہی کہہ گئیں آنکھیں
    شمیم
  • شہرہ دیکھا تو کھل گئیں آنکھیں
    ماہرویوں پہ ڈھل گئیں آنکھیں
    داغ
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter