cheema








cheema کے معنی


چیمہ قوم کے بارے میں برٹش حکمران(برائے ہندوستان) کی رائےتھی کہ یہ لوگ جنگجویانہ صلاحیت کے مالک ہیں۔ یہ صلاحیت /خوبی ان افراد کے درمیان پائے جانے والے سرداروں کی وجہ سے ہوتی ہے اور لڑاکا سپاہیانہ صلاحیت کی بنیاد پر یہ جارح انداز میں جنگ کرتے ہیں اور ان میں حوصلہ مندی بھی ہوتی ہے۔ وفاداری، خودپسندی، طبعی قوت، احکامات کی بجاآوری، جفاکشی، لڑنے کی صلاحیت اور فوجی صلاحیت کے حامل ہوتے ہیں۔ برطانوی حکمران ان کی ان خوبیوں کی بناء پر فوج میں بھرتی کرتے رہے اور نو آبادیاتی کالونیوں میں تعینات رکھا۔ برطانوی گورنمنٹ کی دریافت کے مطابق چیمہ قوم کے افراد میں بے پناہ قوت ہے۔یہ متحد رہتے ہیں اور حملہ آوری میں مستعد رہنا ان کی خاص خوبیاں ہیں۔ لیکن لڑاکا اور آپس میں بھی جھگڑالو قسم کا قبیلہ ہےیہ ہندو تاریخ کے مطابق پری ہسٹری پیریڈ میں چندرا دانشی نسل کے افراد ہیں جو بنیادی طور پر کشتھری کہلاتے ہیں۔ پنجاب کی سرزمین ان کی آماجگاہ رہی ہے اور ہندکو یا ہندی زبان بولنے والے افراد ہیں۔ ان کا اصل پیشہ زمین داری اور کسی بھی فوج میں جنگجو کے لحاظ سے کام کرنا ہے۔ جب یہ مسلمان ہوئے تو جٹ کہلائے اور پھر جٹ سے یہ چیمہ بن گئے۔ یہ کیونکر ہوا، تاریخ قریباً خاموش ہے۔ بہرحال یہ طے ہے کہ یہ جٹ برادری سے ٹوٹ کر چیمہ کہلائے پچھلے کئی سو برسوں سے پنجابی زبان کے بولنے والے شمار کئے جاتے ہیں۔ انتہائی جنگجو اور کاشتکاری میں ماہر سمجھے جاتے ہیں۔ فی زمانہ تجارت وغیرہ میں بھی بڑا پارٹ پلے کررہے ہیں

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter