atwar-e-sittah








atwar-e-sittah کے معنی


وہ چھ طور یا طریقے جو (نقش بندیہ کے نزدیک) سالکون کو حاصل ہونا ضروری ہیں: (ا) لفظ ٫اللہ کا دم، نفس سے کھینچنا جس کا مقام ناف ہے، (٢) قلب سے کھینچنا جس کا محل سینے میں بائیں جانب ہے، (٣) روح سے کھینچنا جس کا محل سینے میں دائیں جانب ہے، (٤) درمیان سینہ سے کھینچنا جس کا محل فم معدہ ہے، (٥) پیشانی سے کھینچنا اور اسے لطیفۂ خفی کہتے ہیں، (٦) کاسۂ سر سے کھینچنا اور اسے لطیفۂ اخفیٰ کہتے ہیں (محققین صوفیہ اور عرفائے کامل فرماتے ہیں کہ سالک کو ان لطائف و اطوار سے معرفت حاصل نہ ہوگی کیونکہ یہ اطوار لطائف تجلیات صفات کے ہیں اور وصال ذات توحید ہی سے حاصل ہوتا ہے)

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter